Sab Se Bada  Gumrah Insan Kon Hai | Qari Sohaib Ahmed Meer Muhammadi 2019 | Pak Social Media

Sab Se Bada Gumrah Insan Kon Hai | Qari Sohaib Ahmed Meer Muhammadi 2019 | Pak Social Media


اس ہستی کی توقیر کی جائے اس ہستی کی عزت کی جائے۔ایک وہ عزت تھی جو آپﷺ کی زندگی میں صحابہ کیا کرتے تھے۔آج میں اور آپ کیسے عزت کر سکتے ہیں؟زندگی کے کسی بھی مرحلے میں اگر اللہ کے رسول ﷺ کا فرمان سامنے آجائے صحیح حدیث سامنے آجائے کسی مومن کیلئے جائز نہیں کہ پھر اس فرمان سے عتراز کرے اللہ ربلعزت اسی لئے قرآن مجید میں فرماتے ہیں تم اللہ پر ایما ن لاو۔اور اسکے رسولﷺ پر ایمان لاو اسکے عزت اور توقیر کرو اللہ کی حمد اور تعریف بیان کرو اور عزت یہ ہے میری زندگی میں جب بھی کوئی مسئلہ پیش آجائے میری جتنی بھی رائے میں قوت ہو،میرے جتنے بھی تجربات عمدہ ہوں،میں کسی بڑے سے بڑے انسان کی بات کو بھی لے رہا ہوں جب اللہ کے رسولﷺ کا فرمان آجائے تو میں زندگی کے تمام پہلوں کو میں خیرآباد کہہ دوں کہ بس اس سے آگے میں نہیں جا سکتہ یہ میری انتہا ہے اللہ کے رسول ﷺ کی بات پر میں اپنی بات کو میں بلند نہیں کر سکتا اور اسی بات کو اللہ ربلعزت نے کچھ یوں سمجھایا اے ایمان والو اللہ اور اسکے رسولﷺ کے فیصلوں سے آگے نہ جاو اللہ سے ڈر جاو اور تقوے کی نشانی بھی یہی ہے۔کہ جہاں اللہ کا حکم آجائے اسکے رسول ﷺ کا حکم آجائے وہاں رک جاو اسی کو ہی حرف اخیر سمجھو وہی تمہارے لئے اٹل فیصلہ ہے وہاں اپنی مرضی کرنا اور اپنی مرضی کو نافر کرنا اس طرح کی غلطی نہ کرنا اور اللہ ربلعزت نے فرمایا رسول اللہﷺکی بات پر اپنی بات کو بلند نہ کرو یہ آیت جب صحابی نے سنی سابت بن قیص بن شماس اپنے گھر بیٹھ کے رونے لگ گئے۔پوچھا کہاں ہے یہ صحابی۔جواب ملا یہ گھر بیٹھے رو رہے ہیں رونے کی کیا بات ہے؟ وہ رو اس لئے رہے تھے کہ اللہ نے ان کو آواز اونچی دی تھی جب بھی بولتے تو وہ اونچا بولا کرتے تھے۔ تو انکو یہ خطرہ لائحق ہوا کہ میری بات تو رسول اللہﷺ سے بلند ہو گئی تو قیامت کے دن تو ہو گا ہی ہو گا اب یہ قرآن اتر چکہ ہوگا میں تو منافق ہو گیا ہووں گا۔آپﷺ نے،اپنے صحابی کو بلایا اور فرمایا تمھیں یہ خوف لاحق ہو گیا کہ تم جہنم میں جاو گے؟ میرے صحابی تم جہنمی نہیں تم تم تو جنت میں جاو گے۔اس بات سے مراد یہ ہے۔جب میرا فیصلہ آجائے تو اسکے آگے کوئی اور بحث کرنے کی ضرورت نہیں ہے اور آج میں جوانوں کو یہ پیغام بھی دینا چاہوں گا آج کسی مسئلہ میں جہاں صحیح حدیث آ جائے وہاں بحث کی ضرورت نہیں ہوتی۔آج چینلز پے بیٹھے اینکرز یہ کہتے نظر آتے ہیں اور آپ کو اس بات کا عہد کرنا چاہئے وہ شخص صحیح حدیث کو قابل بحث سمجھتا ہے حدیث قابل بحث نہیں ہوتی۔قرآن مجید قابل بحث نہیں ہے۔قابل بحث اس شخص کا ایمان ہے۔جو حدیث اور قرآں کو قابل بحث سمجھتا ہے یہ تو سچی باتیں ہیں۔مناظرہ وہاں ہوتا ہے جس بات کی سمجھ نہ آئے جس بات میں شک ہو۔جس کے پہلووں کو اپنی مرضی سے انسان اجاگر کرنا چاہے یہ اللہ کے سچے فیصلے ہیں ان کو تو ماننا ہے۔ان کو تو قبول کرنا ہے ان کو تو زندگی میں اتارنا ہے۔اسی لئے اللہ ربلعزت نے فرمایا کسی مومن مرد کیلئے جائز نہیں،کسی مومن عورت کیلئے جائز نہیں جب اللہ کا فیصلہ قرآن کی شکل میں آجئے اس کے رسول کا فیصلہ حدیث کی شکل میں آجائے پھر وہ اپنی مرضی کرے جو وہاں بھی من چاہی زندگی کو ہی لے کے چلنا چاہتا ہے اس نے اللہ اور اسکے رسول ﷺ کے فیصلے کو ٹھکرا دیا نا فرمانی کی اور جو نافرمانی کا مرتکب ہوتا ہے اس سے بڑھ کر دنیا میں کوئی بھی گمراہ نہیں۔

10 thoughts on “Sab Se Bada Gumrah Insan Kon Hai | Qari Sohaib Ahmed Meer Muhammadi 2019 | Pak Social Media

  1. جزاك الله خيرا كثيرا في الدنيا والآخرة 🌻 آمين يارب العالمين 🌻

  2. Assalamoalaikum
    Alhadulillah meer bhai mashaallah apki awaz behad acchi banai allah pak ne aur ap ka andaj byan karne ka bahut sada sa hai sab samajh me aa jata hai Ameen…..

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *